Ayatul Kursi With Urdu Translation | 2024

آیت الکرسی – تخت کی آیت

آیت الکرسی، قرآن کی سورۃ البقرۃ (سورۃ نمبر 2) کی آیت نمبر 255 ہے، اور یہ ایک بہت اہم قرآنی آیت ہے جو اسلام کی عقائد میں اہمیت رکھتی ہے۔ یہاں پر آپ کو آیت الکرسی کا اُردو ترجمہ اور تشریح ملے گی جس میں اس کی معنوں کو اور اہمیت کو تفصیل سے سمجھایا گیا ہے:

آیت الکرسی کا اصل متن:

اللَّهُ لَا إِلَٰهَ إِلَّا هُوَ الْحَيُّ الْقَيُّومُ۔ لَا تَأْخُذُهُ سِنَةٌ وَلَا نَوْمٌ ۔ لَّهُ مَا فِي السَّمَاوَاتِ وَمَا فِي الْأَرْضِ۔ مَن ذَا الَّذِي يَشْفَعُ عِندَهُ إِلَّا بِإِذْنِهِ۔ یَعْلَمُ مَا بَیْنَ أَیْدِیهِمْ وَمَا خَلْفَهُمْ ۔ وَلَا یُحِیطُونَ بِشَیْءٍ مِّنْ عِلْمِهِ إِلَّا بِمَا شَاءَ ۔ وَسِعَ کُرْسِیُّهُ السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضَ ۔ وَلَا یَئُودُهُ حِفْظُهُمَا ۔ وَهُوَ الْعَلِيُّ الْعَظِيمُ۔

اُردو ترجمہ:

“اللَّه! اس کے سوا کوئی معبود نہیں، وہی زندہ، قائم رہنے والا ہے۔ نیند نہ اس پر آتی ہے، نہ سویا ہے۔ اس کا ملک ہے جو کچھ آسمانوں میں ہے اور جو کچھ زمینوں میں ہے۔ کس کا ذریعہ ہوتا ہے جو اس کے اجازت کے بغیر اس کے پاس شفاعت کرے؟ وہ جانتا ہے جو ان کے سامنے ہے اور جو کچھ ان کے پیچھے ہے، اور وہ لوگ اس کی علم میں سے اس کے کسی حد تک نہیں پہنچتے سوائے اس کے ارادے کے۔ اس کا کرسی آسمانوں اور زمین کو سرپرستی کرتا ہے اور ان کی حفاظت کو اس پر بھار نہیں آتا۔ وہ بلند اور عظیم ہے

Check out:۔ AYATUL KURSI CALLIGRAPHY

تفسیر اور تشریح:

آئیے ہم اس آیت کے معانی اور اہمیت کی تفصیلی تشریح کی طرف بڑھیں:

1. مطلق توحید:

آیت الکرسی ایک اہم اصول کو تصدیق کرتی ہے – اسلامی توحید کا عقیدہ۔ یہ کہتی ہے، “اللَّه! اس کے سوا کوئی معبود نہیں۔” یہ بیان اسلام کے اہم عقائد کو یاد دلاتا ہے کہ صرف ایک اللہ ہے، جو کائنات کا خالق اور پالنے والا ہے۔

Check out: AYATUL KURSI IN ROMAN ENGLISH

2. الہی صفات:

آئیے آگے بڑھیں اور آیت الکرسی میں آمدین اللہ کی کچھ اہم صفات کا ذکر ہے۔ یہ اسے “زندہ” اور “قائم رہنے والا” کہتی ہے۔ یہ صفات اللہ کی دائمیت کو اور ت

مام کائنات کو پالنے والے کے طور پر نشانہ بناتی ہیں۔ انسان جو کئی مرتبے پر نسوار ہوتے ہیں، ان کے مقابلے میں اللہ دائماً زندہ رہتے ہیں اور ان کو زندگی اور روزی دینے والے کے طور پر ہیں۔

3. الہی ہوشیاری:

آیت الکرسی اللہ کی لگاتار ہوشیاری کو ذکر کر کے ظاہر کرتی ہے کہ نہ تو اس پر سونے کی ضرورت ہوتی ہے اور نہ ہی وہ کبھی سوتا ہے۔ یہ صفت اللہ کی مخلوق پر لگاتار نگرانی اور حفاظت کو نمایاں کرتی ہے۔ انسان کی طرح جو آرام کی ضرورت ہوتی ہے، اللہ کبھی بھی تیار رہتے ہیں اور ان کی مخلوق کی تمام چیزوں پر نظر رکھتے ہیں۔

Check out: AYATUL KURSI WITH URDU TRANSLATION

4. الہی ملکیت:

آیت میں اس بات کی آخری تصدیق کی گئی ہے کہ آسمانوں میں کچھ بھی ہو اور زمینوں میں کچھ بھی، وہ سب اللہ کا ملک ہے۔ یہ ملکیت کا اظہار ہے کہ وہ تمام کائنات کی سرپرستی کرتے ہیں، ستاروں سے لے کر زمینی دنیا تک۔ کچھ بھی اللہ کے اختیار اور اختیار کے بغیر آزادانہ طریقے سے موجود نہیں ہوتا۔

5. الہی شفاعت:

آیت ایک استفساری سوال پیش کرتی ہے: “کس کا ذریعہ ہوتا ہے جو اس کے اجازت کے بغیر اس کے پاس شفاعت کرے؟” یہ سوال اللہ کی انتہائی اختیار اور فیصلہ کاری کی زیادہ سے زیادہ اختیار کو ظاہر کرتا ہے۔ اسلام میں شفاعت اللہ کی رضا کے بغیر نہیں ہو سکتی، جو اللہ کو انتہائی فیصلہ کار اور امور کا فیصلہ کرنے والے کے طور پر نشانہ بناتا ہے۔

6. الہی علم:

آیت الکرسی میں اللہ کی علم کو ایک سب کچھ شامل کرنے والا ذکر کیا گیا ہے۔ اس میں کہا گیا ہے کہ اللہ کا علم موجودہ، گزشتہ، اور آنے والے کو جانتا ہے۔ اس کا علم جامع اور کامل ہے، اور یہ علم اس کے فیصلوں اور اختیار کو آگاہ کرنے کے لئے استعمال ہوتا ہے۔

Check out: AYATUL KURSI IN HINDI ARABIC

7. بے انتہا سرپرستی:

آیت میں اللہ کا “کرسی” آسمانوں اور زمین پر پھیلنے کا ذکر ہے۔ یہ تصویر اللہ کی حکومت اور کائنات کی مکمل زیر اختیاری کو ظاہر کرتی ہے۔ اس کی اختیار و اقتدار میں کوئی حدود نہیں ہیں، اور اس کا کنٹرول مکمل اور حاکمانہ ہے۔

8. بے انتہا حفاظت:

آیت میں یہ بھی تائید کی گئی ہے کہ اللہ کی حف

اظت کا زوال نہیں ہوتا۔ وہ اپنی مخلوق کو آسانی سے محافظت اور پالتا ہے۔ یہ بات زیر اختیار کی طرف اشارہ کرتی ہے کہ اللہ کی طاقت بے انتہا ہے۔

9. سب سے بلند، سب سے عظیم:

آیت کا ختم ہوتے ہوئے اللہ کو “سب سے بلند” اور “سب سے عظیم” قرار دیا گیا ہے۔ یہ اللہ کی بلندی اور عظمت کو تاکید کرتا ہے۔ یہ دکھاتا ہے کہ وہ سب کچھ کے مقابلے میں انتہائی عظیم ہیں اور ان کی فوقیت کو یاد دلاتا ہے۔

آیت الکرسی کی تلاوت اور پڑھائی اسلامی تعلیم و تربیت کا اہم حصہ ہے۔ یہ عبادت کا عمل نہیں ہے بلکہ اس کی روحانی اہمیت کی بنا پر پڑھا جاتا ہے اور اس کی تفصیل کی جاتی ہے کیونکہ یہ اللہ کی طرف سے دی گئی اہم پیغام کو جاتا ہے اور اس کے بارے میں مزید سمجھنے کو مدد فراہم کرتا ہے۔ آیت الکرسی کی اردو ترجمہ اور تشریح یہ ثابت کرتی ہے کہ یہ قرآن کی آیت ہے جو اسلامی تعلیم کی بنیاد کو چھووتی ہے۔ اس کا موجودہ کرسی بنیاد کی طرح ہے جو اللہ کے کائنات پر مکمل حکومت کو ظاہر کرتا ہے، اور یہ آیت معاشرت میں ایک اہم روحانی اور ایمان کی تصدیق کا ذریعہ بنتی ہے۔

Leave a Comment